Friday, April 19, 2024

کے کے پاٹھک کے خلاف عدالت میں مقدمہ درج، اساتذہ کے حوالے سے متنازعہ بیان دیا تھا

(ترہت نیوزڈیسک)

محکمہ تعلیم کے ایڈیشنل چیف سکریٹری کے کے پاٹھک کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ گزشتہ دو دنوں سے کے کے پاٹھک کے وائرل ویڈیو کو لے کر ایوان میں ہنگامہ جاری ہے۔ اب ان کے خلاف مظفر پور سی جے ایم کورٹ میں شکایت درج کی گئی ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ کے کے پاٹھک کے اساتذہ کے بارے میں بیان دینے پر ان کے خلاف شکایت درج کی گئی ہے۔ ایڈوکیٹ ونود کمار نے محکمہ تعلیم کے ایڈیشنل چیف سکریٹری کے کے پاٹھک کے خلاف آئی پی سی کی دفعہ 504، 506 کے تحت شکایت درج کرائی ہے۔ اس معاملے میں آشیش کمار ولد سدھیر جھا ساکنہ نان پور سیتامڑھی اور ونائک کمار ولد چندرم پرساد سنگھ ساکن سرایا تھانہ مظفر پور کو اس معاملے میں گواہ بنایا گیا ہے۔

معلومات کے مطابق ایڈوکیٹ ونود کمار نے کے کے پاٹھک کے خلاف آئی پی سی کی دفعہ 504، 506 کے تحت 9:15 پر اسکول کھولنے اور صفائی کرنے کے بارے میں ان کے بیان کے خلاف شکایت درج کرائی ہے۔ اس معاملے کی سماعت کی تاریخ 4 مارچ مقرر کی گئی ہے۔ معاملے کے بارے میں شکایت کنندہ کم ایڈوکیٹ ونود کمار نے کہا کہ ان کی اہلیہ ٹیچر ہیں، حال ہی میں کے کے پاٹھک نے اساتذہ کی ٹائمنگ کے حوالے سے جو بیان دیا ہے وہ انتہائی قابل مذمت ہے، انہوں نے اساتذہ کے لیے نازیبا الفاظ استعمال کیے جس سے انہیں کافی تکلیف ہوئی ہے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ بہار کے محکمہ تعلیم کے ایڈیشنل چیف سکریٹری کے کے پاٹھک اسکول کے اوقات کو لے کر اپنے حکم پر قائم ہیں۔ جمعرات کو وی سی نے تمام ڈی ای اوز اور ڈی پی اوز کے ساتھ کہا کہ کسی بھی صورت میں اسکول صبح 9 بجے سے شام 5 بجے تک ہی چلیں گے۔

کے کے پاٹھک کو لے کر آج ایک بار پھر بہار اسمبلی میں ہنگامہ ہوا۔ کے کے پاٹھک کے وائرل ویڈیو پر اپوزیشن نے دونوں ایوانوں میں ہنگامہ کھڑا کردیا۔ حکومت کی جانب سے وزیر وجے چودھری نے اس سلسلے میں جواب دیا۔

انہوں نے کہا کہ کسی افسر کو یہ حق نہیں پہنچتا کہ وہ ایک عام شہری سے بھی زیادتی کرے۔ ایسی صورتحال میں کوئی بھی افسر کسی استاد یا ایم ایل اے کو گالی کیسے دے سکتا ہے؟ ہم نے اس پر سخت اعتراض کیا ہے۔ اگر ممبر اپنے بیان کی حمایت میں ایسی کوئی ویڈیو کلپنگ دکھانا چاہے تو ہر سوال میں ویڈیو چلنا شروع ہو جائے گی۔ یہ روایت مناسب نہیں ہوگی۔

Related Articles

Stay Connected

7,268FansLike
10FollowersFollow

Latest Articles